سکون قلب

ایک دن میں ایک بزرگ کے پاس سکون قلب کی تلاش میں گیا- وہاں ایک صاحب نے بزورگ سے عجیب سا سوال کر دیا مجھے پہلے تو کچھ نہ سمجھ میں آیا- سوال : بابا جی! حق کیا حق سے لڑھ سکتا ہے؟ میں پہلے تو "حق" کو نہ سمجھ سکا، کہ اس سے مراد کیا ہے- بابا جی نے فرمایا، حق کبھی حق سے نہیں لڑتا، حق حق کی ذات سے واقف ہوتا ہے- مگر جب حق اپنی ذات سے نہ واقف ہو تو حق خود سے بھی لڑتا ہے اور دوسرے حق سے بی تصادم اختیار کر سکتا ہے- اس لے اپنی ذات کو جانا بہت ضروری ہے
اس بات سے مجھے سکون قلب تو نہ ملا مگر خود کو جانے کا، خود کی پہچان کا شوق ضرور پیدا ہو گیا
تحریر : خاموش مسافر ٢٠١٢/سپتمبر/٦

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s