محبوب کا سجدہ

محبوب کا سجدہ

سکونِ قلب کی تلاش میں پھرتا رہا یہا سے وہا
جب دل ہو نہ پاس تو سکوں کھا ملا کرتا ہے
لامحدود و لمتنھی و محبت بھی رب کی اک شکل
عید ہو جاتی ہے، جب ہو جاے دیدار محبوب کا
ہر جھوٹے کی طرح دعوہ مجھے بھی ہے محبت کا
سجدہ نہ ہو سکا محبوب کا دیوانے کی طرح

خاموش مسافر — ٢٠١٢-١٠-١١

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s