ظالم لوگوں کا زمانہ

دنیا میں ہر طرح کا انسان ہوتے ہیں- کچھ اچھے بھی ہوتے ہیں اور کچھ برے بھی اور کچھ ظالم بھی جن کو دوسروں پر ظلم کر کے بہت سکوں ملتا ہے- آج میں ان ظالم لوگوں کے بارے میں کچھ کہنا چاہتا ھوں جن کے پاس کسی انسان کی کمزوری ہاتھ میں آ جے اور اس کمزوری کو استمال کر کے اپنے نفس کی تسکین کی خاطر اس شخص پر ظلم کی بارش وقت با وقت کرتے رہتے ہے اور شاہد وہ ظالم انسان اپنے آپ کو امریکہ کی طرح سپر پاور سمجھنے لگتا ہے جو ہر کچھ وقت کے بعد مسلمانوں کے جذبات بھڑکا کر مسلمانوں کے عقیدوں کی مضبوطی کا چکپ کرتا رہتا ہے کہ کہی مسلمان امریکہ کے خلاف کھڑے ہونے کی صلاحیت تو حاصل نہیں کر گے- اسی طرح ظالم انسان کسی انسان پر ظلم کرتا رہتا ہے اور اپنے سکون کا اظہار کچھ یوں کرتے ہیں

"Good, thanks"

ظالم لوگوں کو کیا معلوم ظالم اور مظلوم کے درمیان ایک عجیب سا رشتہ پیدہ ہونے لگتا ہے اگر ہر کچھ وقت کے بعد ظالم، مظلوم پر ظلم کرتا رہے- اس ظلم کی بارش کی وجہ سے زمین میں ایک ایسا بودہ ظالم انسان لگا کر اس کی پرورش کر رہا ہوتا ہے جسکو ہم آزادی اور خوف کا بودہ کہ سکتے ہیں- یہ بودہ مظلوم کو آزادی اور ظالم کو خوف اتا کرتا ہے- اور کبھی کبھی ایسا بھی ہوتا ہے کہ مظلوم ظالم کی محبت میں مبتلہ ہو جاتا ہے جس کی وجہ سے مظلوم کے لیے ظلم تو بحثیت عجیب کیفیت کا سبب ضرور بن سکتا ہے جو دیدار یار کی رہ بن جاتا ہے- مگر کچھ وقت کے بعد ظالم کے دل میں مظلوم کے لے ایک خاص تڑپ پیدا ہو جاتی ہے جس کا پتا بہت دیر سے لگتا ہے-

میرے زندگی میں ظالم لوگ بہت سے ہیں اور کچھ خدا بن بیٹھے ہیں مگر میں ان تمام ظالم لوگوں کے لے دعا ان کی خوشی کی مانگتا ہوں- کیونکہ ایک بابا جی کہتے ہیں، "دوشمن یعنی ظالم کے لے اچھے سے اچھی کی دعا مانگوں- میں یہ تو نہیں جانتا کہ ظالم کے لیے مانگی گئی دعا قبول ہو نہ ہو مگر وہ دعا رب تعالہ آپ کے حق میں وہ دعائیں ضرور پوری کر دے گا-"

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s