کچھ وقت میرے نام لکھ دو

کسی روز کچھ وقت میرے نام بھی لکھ دو
چلو مان لیا، تم کو مجھ سے، محبت نہ سہی
لکھو دو میرے نام کے خلاف کچھ تو لکھ دو

یاد کرو! اس نادان نے بہت ستایا ہوگا تمہے
پس ان تمام گستاخیوں و نالیقیوں پر لکھ دو
لکھ دو میری خرابیوں اور برایوں پر لکھ دو

کچھ ایسا لکھو کہ لفاظوں میں میرا نام لکھ دو
خیال کے تصور میں میری تصویر پر لکھ دو
کچھ لکھو بس اپنے ہاتھوں سے میرا نام لکھ دو

رات کے کسی لمحے مجھے یاد کر کے لکھ دو
لکھو کوئی خط یا اسمس یا انٹرنیٹ پوسٹ لکھ دو
کوئی مقدمہ میرے نام، احتراف محبت پر لکھ دو

پس تم کچھ لکھو جس میں میرا نام لکھ دو
گستاخ کی اس خواہش پر کہی میرا نام لکھ دو
دیدار نہ ہو اس جہاں میں، پس میرا نام لکھ دو

کسی روز کچھ وقت میرے نام بھی لکھ دو
چلو مان لیا، تم کو مجھ سے، محبت نہ سہی
لکھو دو میرے نام کے خلاف کچھ تو لکھ دو

خاموش مسافر — ٢٠١٣-٠٧-١٣

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s