محبت میں تین مقام تصادم کے بھی ہیں

محبت میں جہاں انسان سے بہت عجیب حرکات سرزد ہوتی ہیں وہاں موحب کی زندگی میں تین مقام تصادم کے بھی اتے ہیں- جس میں موحب پہلے خود اپنے آپ سے لڑتا ہے کیوں کہ محبوب کا حکم اس کدر سخت صادر کر دیا جاتا ہے کہ موحب پہلے اپنے نفس سے لڑتا ہے اور تصادم میں موحب اپنی موت کا فیصلہ کر دیتا ہے- اس موت میں اس کو کسی کی امانت میں خیانت کی اجازت نہیں ہوتی یعنی اس کو اپنے جسم کی موت کی اجازت نہیں ہوتی مگر اس کی روح اور نفس کی موت واقعہ ہوتی ہے جس میں اس کو اپنے جسم کا خیال نہیں رہتا ہے- محبوب کی جدائی کا غیم اس کدر زیادہ ہوتا ہے کہ کچھ اور سمجھ بھی نہیں اتا اور محبوب بھی ظالم ہوتا ہے جو ظلم کر کے خوش ہوتا ہے-

اس وقت جب موحب اپنی موت کے غم میں ہوتا ہے تو لوگ اس کو پاگل اور بہت کچھ کہنے لگتے ہیں- اس وقت انسان معاشرے سے تصادم اختیار کر لیتا ہے- کیوں کہ دنیا کے اصول اور محبت کے اصولوں کی زندگی ایک سی نہیں ہوتی- محبت اعلی سے اعلی مقام پر چلنے کا نام ہے جبکہ دنیا ایک خاص مادے کے اصول میں انا کی جنگ کا نام ہے- اس وقت محبت کے اعلی مقام پر چلنے کے لے دنیا سے تصادم ہوتا ہے اور ہر کوئی اس کا مخالف ہو جاتا ہے- یہ وقت بہت مشکل ہوتا ہے-

یہی چلتا رہے تو ایک وقت ایسا بھی اتا ہے جب انسان خدا سے تصادم اختیار کرتا ہے اور اس کے وجور کو دیکھنے کا آرزو مند ہو جاتا ہے- اور خدا سے اپنے دیدار اور رب کے وجود کا آرزو مند ہو جاتا ہے یا رب سے اپنے محبوب کے فیصلے کو محبوب کے ہاتوں خود ختم کرنے کا آرزو مند ہو جاتا ہے- اس وقت انسان خدا سے ہر کچھ لمحے کے بعد لڑتا رہتا ہے تاوقت کہ اس کی کوئی ایک دعا قبول نہ ہو جاۓ-

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s